قبرستان میں قرآن خوانی F10-17-06 - احکام ومسائل

تازہ ترین

Saturday, February 8, 2020

قبرستان میں قرآن خوانی F10-17-06


قبرستان میں قرآن خوانی

O ہمارے ہاں یہ رواج ہے کہ قبرستان میں قرآن خوانی کے لئے حفاظ کرام کی خدمات حاصل کی جاتی ہیں، وہ قبروں کے پاس شبینہ کرنے کا اہتمام کرتے ہیں، کیا ایسا کرنا جائز ہے، کتاب وسنت کی روشنی میں وضاحت کردیں۔
P قبر ستان قراءت قرآن کا محل نہیں ہے لہٰذا ان میں قرآن خوانی کا اہتمام خلاف شریعت ہے۔ جیساکہ درج ذیل حدیث میں اس کا واضح اشارہ ملتا ہے:
’’اپنے گھروں کو قبر ستان نہ بناؤ، شیطان اس گھر سے بھاگ جاتا ہے جس میں سورۂ بقرہ کی تلاوت کی جاتی ہے۔‘‘ (مسند امام احمد ص:284/27)
اس حدیث سے معلوم ہوا کہ گھروں میں قرآن مجید کی تلاوت کا اہتمام کرنا چاہیے اور انہیں قبرستان نہ بنانے کا مطلب یہ ہے کہ قبرستان قرآن پڑھنے کا محل نہیں ہے۔حفاظ کرام کو بھی چاہیے کہ وہ ناجائز کام کیلئے اپنی خدمات پیش کرنے سے گریز کیا کریں۔(واللہ اعلم)

No comments:

Post a Comment

Pages