کلی کرتے وقت پانی کا پیٹ میں چلے جانا؟! F25-16-05 - احکام ومسائل

تازہ ترین

Thursday, May 14, 2020

کلی کرتے وقت پانی کا پیٹ میں چلے جانا؟! F25-16-05

احکام ومسائل، رمضان، روزہ، کلی، پیٹ میں پانی جانا

کلی کرتے وقت پانی کا پیٹ میں چلے جانا؟!

O اگر کوئی روزہ دار وضو کرے اور کلی کرتے ہوئے غیر ارادی طور پر پانی پیٹ میں چلا جائے تو کیا اس سے روزہ خراب ہو جاتا ہے؟
P جب روزہ دار کلی کرتا ہے اور غیر ارادی طور پر پانی پیٹ میں چلا جاتا ہے تو اس سے روزہ نہیں ٹوٹتا۔ کیونکہ اس نے اپنے مقصد اور ارادے سے کوئی ایسا کام نہیں کیا جو روزے کو توڑ دینے والا ہو‘ ہاں قصداً ایسا کرنے سے روزہ ختم ہو جائے گا۔ غیر اختیاری طور پر کوئی غیر شرعی کام سرزد ہونے پر مؤاخذہ نہیں ہے۔ جیسا کہ ارشاد باری تعالیٰ ہے: ’’اور جو بات تم سے غلطی سے ہو گئی ہو اس میں تم پر کوئی گناہ نہیں لیکن جو دل کے ارادے سے کرو تو اس پر مؤاخذہ ہے۔‘‘ (الاحزاب: ۵)
اس آیت کریمہ سے معلوم ہوا کہ غلطی پر اللہ کے ہاں مؤاخذہ نہیں ہے۔ صورت مسئولہ میں روزے دار نے کلی کی اور غیر ارادی طور پر پیٹ میں پانی چلا گیا تو اس پر کوئی مؤاخذہ نہیں اور نہ ہی اس سے روزہ خراب ہو گا۔ واللہ اعلم!

No comments:

Post a Comment

Pages