بچوں کو دودھ پلانے پر روزہ میں رخصت F10-32-01 - احکام ومسائل

تازہ ترین

Wednesday, May 6, 2020

بچوں کو دودھ پلانے پر روزہ میں رخصت F10-32-01


بچوں کو دودھ پلانے پر روزہ میں رخصت

O اللہ تعالیٰ نے مجھے دو بچیاں دی ہیں اور میں انہیں دودھ پلاتی ہوں، اگر میں روزہ رکھوں تو اس سے دودھ متاثر ہوتا ہے، شریعت مطہرہ میں میرے متعلق کیا گنجائش ہے، کیا میں فدیہ دے سکتی ہوں یا مجھے موقع ملنے پر روزے رکھنا ہوں گے؟؟
P حاملہ اور دودھ پلانے والی عورت کے متعلق حضرت انسt سے مروی ایک حدیث میں ہے کہ رسول اللہe نے فرمایا: ’’اللہ تعالیٰ نے مسافر سے روزہ اور نصف نماز کو ساقط کر دیا ہے، اسی طرح حاملہ اور دودھ پلانے والی خاتون سے روزہ ساقط کر دیا ہے۔‘‘ (مسند امام احمد ص ۲۴۷ ج ۳)
اس حدیث کے پیش نظر اگر دودھ پلانے والی عورت کو اپنے بچے کے متعلق کمزوری کا اندیشہ ہو تو اسے روزہ چھوڑ دینے کی اجازت ہے لیکن دوسرے دنوں میں ترک کردہ روزوں کی قضا ضروری ہے لیکن اگر آئندہ رمضان سے پہلے پہلے اسے ترک شدہ روزوں کی قضا کا وقت نہیں ملتا اور وہ اس کی طاقت نہیں رکھتی تو اس صورت میں اسے ہر روزے کے بدلے ایک مسکین کو دو وقت کا کھانا کھلانا ہوگا، ایسی عورت کو روزہ کی بالکل معافی نہیں ہے اور نہ ہی اسے قضا کے ساتھ فدیہ دینے کی ضرورت ہے۔ جیسا کہ بعض علماء کا موقف ہے، بہرحال دودھ پلانے والی عورت جتنے روزے چھوڑے گی، ان کی بعد میں قضا دے اگر اس کی طاقت نہیں تو فدیہ دے کر اپنی ذمہ داری سے سبکدوش ہو سکتی ہے۔


No comments:

Post a Comment

Pages